30

شہباز شریف نے عمران خان پر جھوٹے وعدے کرنے کا الزام لگایا.

مسلم لیگ (ن) کے صدر

اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے وزیراعظم عمران خان کے ’سب سے بڑے ریلیف پیکیج کو مسترد کردیا ہے جس کا اعلان انہوں نے گزشتہ روز قوم سے ٹیلی ویژن خطاب میں کیا تھا، اسے جھوٹ کا پلندہ قرار دیتے ہوئے، نیوز ایچ ڈی ٹی وی چینل کی رپورٹ کے مطابق۔

عمران خان نے جمعرات کو 120 ارب روپے کے پاکستان کے اب تک کے سب سے بڑے سبسڈی پیکج کا اعلان کیا جس میں 130 ملین لوگوں کو گھی آٹے اور دالوں پر 30 فیصد رعایت دی جائے گی۔ پیکج کے مطابق مستفید ہونے والے اگلے چھ ماہ کے لیے رعایت کا فائدہ اٹھا سکیں گے۔

جمعرات کو جاری بیان میں شہباز شریف نے کہا کہ کیا حکومت نے بجٹ کا اعلان کرتے وقت یہ نہیں کہا تھا کہ یہ ٹیکس فری بجٹ ہے؟ اب قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں جلد پٹرول مہنگا ہو جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ جب گیس بجلی اور پیٹرول کی قیمتیں بڑھیں گی تو مہنگائی سے کیسے نمٹا جائے گا۔ ایسی حکومت کو سنجیدگی سے لینا جس کے بجٹ کے اعداد و شمار ناقابل بھروسہ ہوں خود فریبی کے سوا کچھ نہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوام کو ریلیف دینا اور پی ٹی آئی کی حکومت دو متضاد چیزیں ہیں۔

شہباز شریف نے کہا کہ ملک غیر ملکی قرضوں کے بوجھ تلے دب چکا ہے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی شرائط نے بھی قوم کی مشکلات میں اضافہ کر دیا ہے۔

ہول سیل مارکیٹ میں چینی کی قیمت 130 روپے فی کلو سے تجاوز کر گئی ہے۔ دو روز میں چینی کی قیمت میں 5 روپے فی کلو اضافہ ہوگیا۔ قوم جھوٹے وعدوں پر مبنی حکومت کے کسی بھی بیان پر اعتماد نہیں کرتی، “مسلم لیگ ن کے رہنما نے کہا۔

انہوں نے یہ دعویٰ بھی کیا

کہ چینی کا باقی ماندہ ذخیرہ مزید 15 دن تک استعمال کیا جا سکتا ہے اور وزیراعظم ٹی وی پر قوم سے خطاب کی خواہش پوری کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کو مہنگائی کے تاریخی ریکارڈ بنانے کے بعد قوم سے خطاب کرنے کی بجائے اپنی ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے استعفیٰ دینا چاہیے تھا۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف مہنگائی کو عالمی مسئلہ قرار دے کر اپنی نااہلی، کرپشن اور غلط فیصلوں کو چھپانے کی کوشش کر رہی ہے۔

شہباز شریف نے کہا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف نے ترقی کی شرح کو 5.8 فیصد اور مہنگائی کو 3.6 فیصد پر لا کر دکھا دیا کہ حکومتی معاملات کیسے چلائے جاتے ہیں، شہباز شریف نے کہا کہ 3 سال میں 15 ہزار ارب روپے کا قرضہ اتاریں گے تو مہنگائی کی حد ہے۔ جاگ اٹھ.”

دریں اثناء مسلم لیگ ن کی رہنما حنا پرویز بٹ نے جمعرات کو پنجاب اسمبلی میں وزیراعظم کے ریلیف پیکج کے خلاف قرارداد جمع کرادی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں